منگل , جولائی , 7 , 2020

ہڈیاں کمزور ہونے کی ایک وجہ نیند کی کمی

نیویارک:  نیند کی کمی ہر انسان کے لیئے نقصان دہ تو ہے ہی مگر اس کے ساتھ ساتھ ہی اگر خواتین کی  نیند حاض طور پر اگر نہیں پوری ہوتی اور یہ روٹین کئی سال تک برقرار رکھتی ہیں تو اس وجہ سے آہستہ آہستہ ان کی ہڈیاں کمزور ہونا شروع ہوجاتی ہیں  اور یہ کیفیت آگے چل کر ہڈیوں کے بھربھرے پن (اوسٹیوپوروسِس) کی وجہ بن سکتی ہے۔

ایک ریسرچ سے بات سامنے آئی ہے کہ خواتین اگر دن میں پانچ گھنٹے یا اس سے بھی کم وقت کو اپنے سونے کی عادت بنالیں تو اس سےصحت پر بہت بُرا اثر پڑتا ہے۔ اس کا سب سے بڑا اثر ہڈیوں کے بھربھرے پن کی صورت میں سامنے آتاہے جو آگے چل کر جوڑوں کے درد یا گٹھیا کے مرض کی وجہ بھی بن سکتا ہے۔

نیویارک میں یونیورسٹی آف بفیلو میں صحت کے پروفیسر ہیدر بالکم نے اس بات کی تصدیق کی کہ نیند کی کمی کی وجہ سے انسانی صحت پر بہت بُرا اثر پڑتا ہے۔ اسی لیئےخصوصاً خواتین کو چاہیے کہ وہ سات گھنٹے تک کی معمول کی نیند ضرور لیں ورنہ ان کی نفسیاتی صحت کے ساتھ ساتھ ہڈیاں بھی متاثر ہوسکتی ہیں۔

 

یہ تحقیق جرنل آف بون اینڈ منرل ریسرچ میں شائع ہوئی ہے جس کے مطابق 11 ہزار سے زیادہ ایسی خواتین کو شامل کیا گیا ہے جن میں سن یاس شروع ہوچُکی تھی، یعنی وہ عمر میں  تھیں کہ جب خواتین کی ماہواری روک جاتی ہے۔ ان میں سے جو خواتین پانچ گھنٹے یا اس سے کم کی نیند لیتی ہیں، ان کے جسم میں چار حصوں کی ہڈیاں کمزور ہوجاتی ہیں یعنی ہڈیاں کثافت کھو کر نرم پڑسکتی ہیں۔ ان میں پورے جسم، کولہے، گردن اور ریڑھ کی ہڈیاں کمزور ہوجاتی ہیں۔

سائنسدانوں کے مطابق  نیند کا پورا نہ ہونا صرف ہڈیوں پر بُرا اثر نہیں ڈالتی  بلکہ اس کے علاوہ موٹاپے، بلڈ پریشر اور دل کے امراض کی وجہ بھی بن سکتی ہے۔

Check Also

Social media impacting teenager's health

سوشل میڈیا بچوں کے لیے نقصان دہ ثابت

سڈنی : سکول جانے والے 1000 بچوں کا مطالعہ کیا گیاہے جس میں یہ ظاہر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے