منگل , جولائی , 7 , 2020

بھارتی فوج نے کشمیر میں میلاد نبی کی تقریب کو روک دیا

سری نگر:  مودی کی دورِ حکومت میں مقبوضہ کشمیر کی قدیم درگاہ حضرت بل میں پہلی بارعید میلادالنبی کے میلاد پر پابندی لگائی گئی۔

کشمیری میڈیا کی خبر کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے شہر سری نگر میں واقع مقدس درگاہ حضرت بل میں سالوں سے میلادالنبی کا اہتمام  بہت خوشی اور مذہبی جذبہ سے کیا جاتا تھااور ہر سال ہزاروں کی تعداد میں لوگ شرکت کرتے تھے۔

اس اجتماع کےموقع پرشرکاء کو صدیوں سے محفوظ خاتم النبین حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے موئے مبارک کی زیارت کرائی جاتی ہے۔ اور اسی نسبت سے اس درگاہ کو دنیا بھر میں خصوصی حیثیت حاصل ہے جس سے مسلمانوں کا قلبی میلان اور محبت برسوں سے قائم ہے۔

مودی سرکار نے تمام روایتوں، مذہبی احترام اور شخصی آزادی کو ختم کرتے ہوئے تاریخ میں پہلی بار حضرت بل کی درگاہ میں عید میلاد النبی کے اجتماع کو آخری موقع پر روک دیا جس سے کشمیر بھر میں رہنے والے مسلمانوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی۔

5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد سے ابھی تک وادی میں کرفیو لگا ہے اور کشمیری بھارتی فوج کی طرف سے انسانی حقوق کی سخت خلاف ورزیاں بھی کررہے ہیں۔

Check Also

Iraq Protest Firing

عراق میں کشیدگی مسلح شخص کی جانب سے حکومت مظاہرین پر فائرنگ ، 20 افراد ہلاک ، 60 زخمی

بغداد: عراق میں حکومت کے خلاف مظاہرین پر مسلح افرادکی جانب سے فائرنگ ،جس کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے