منگل , جولائی , 7 , 2020

زرعی قرزضے 1 ہزار ارب سے اوپر چلے گۓ: رضا باقر

[Spider_Calendar id=”1″ theme=”13″ default=”month” select=”month,”]

 

 

 

کراچی:  پہلی مرتبہ زرعی قرضے ایک ہزار ارب روپے کراس کرگۓ۔

بینکوں کو اس سال حکومت نے 1350 ارب روپے کا ہدف دیاتھا۔ گورنر بینک آف پاکستان ڈاکٹر رضا باقر  نےزراعت کے شعبے کو قرضوں کی بحالی پر تعریف کی،  جو باقی سالوں کی نصبت زیادہ بلند سطح پر پہنچ گئ ہے۔

گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ پاکستانی ہسڑی میں یہ پہلی بار ایسا ہوا کہ زرعی شعبے کے قرضے ایک ٹریلین روپے سے بڑھ گئے۔ انہوں نے یہ بات زرعی قرضہ مشاورتی کمیٹی (اے سی اے سی) کے پشاور میں ہونے والی کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہی۔ یہ اجلاس اسٹیٹ بینک کی جانب سے ملک کے پسماندہ صوبوں اور علاقوں میں زرعی قرضے بڑھانے کی مسلسل کوششوں کا حصہ ہے۔

ڈاکٹر رضاباقر نے بینکوں پر دباؤ ڈالتے ہوئے کہا کہ وہ زرعی قرضوں کے متعلق اسٹیٹ بینک کے اہداف اور بنک پالیسی کو مزید بہتر کرنے کی کوشش کریں۔

Check Also

New tax policy announced

فکسڈ ٹیکس اسکیم ، شناختی کارڈ کی پابندی عائد

اسلام آباد :سینٹ کی قا‏ئمہ کمیٹی برائے خزانہ کی جانب سے اجلاس ہو ا جس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے