اتوار , جنوری , 19 , 2020

دانت اور دل کا تعلق، دانت صاف رکھیں تاکہ دل بھی محفوظ رہے

Prevent Heart Attack

سیول: بارہ سال سے جنوبی کوریا میں ہونے والی ڈیڑھ لاکھ سے زیارہ افراد پر تحقیق نے یہ ثابت کیا ہے کہ وہ لوگ جو دن میں تین بار دانت صاف کرتے ہیں ان کے دل کی دھڑکن کے کم ہونے کے اندیشے کم ہوتے ہیں۔

یہ رپورٹ یورپین جرنل آف پری وینٹیوکارڈیالوجی کے تازہ شمارے میں شائع ہو ئی ہے جس میں یہ بات سامنے آئی ہےاس مطالعہ میں 40 سال سے 79 سال کے افراد شامل ہیں ۔ یہ وہ افراد ہیں جن کو کبھی دل کے دورے یا دل کی دھڑکنوں میں کوئی رکاوٹ محسوس نہیں ہوئی ۔ان افراد کو 2003 اور 2004 میں مطالعہ کی غرض  سے بطور رضاکار شامل کیا گیا تھا۔

بطور رضاکار رہنے والے افراد کو آئندہ دس سال کے لیے مشاہدہ میں رکھا گیا جس میں ان کے رہن سہن، کھانے پینے اور زندگی گزارنے کے اطوار کو مدنظر رکھا گیا ہے۔ جب اس مطا لعے کا اختتام ہوا تو یہ بات واضح ہوئی کہ وہ لوگ جو دن میں تین یا تین سے زیادہ بار دانت صاف کرتے ہیں ان میں دل کی دھڑکنیں بے قابو ہونے کا امکان 10 فیصد ، جبکہ دل کے دورے کا امکان 12 فیصد ہے۔

تاہم اس حوالے سے کوئی ٹھوس نتائج سامنے نہیں آئے مگر اس سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ دن میں تین بار دانت صاف کرنے والے افراد کے منہ کے جراثیم (بیکڑیا) مزید نئے جراثیم نہیں بناپاتے ۔

بصورت دیگر ان بیکڑیا کی تعداد بڑھ جاتی ہے اور یہ پیٹ میں شامل ہو کر خون میں شامل ہو جاتے ہیں اور دل کی رگوں تک پہنچتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق دل کی دھڑکنوں کو طبی زبان میں ” آرٹرئیل فائبریلیشن ” کہا جاتا ہے جو بعض دفع دل کی دھڑکنوں میں رکاوٹ کے ساتھ ،ساتھ فالج  اور ڈیمینشیا کی وجہ بن سکتا ہے۔

Check Also

Social media impacting teenager's health

سوشل میڈیا بچوں کے لیے نقصان دہ ثابت

سڈنی : سکول جانے والے 1000 بچوں کا مطالعہ کیا گیاہے جس میں یہ ظاہر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے