منگل , جولائی , 7 , 2020

قومی ٹیم کا آسٹریلیا دورہ ، پاکستانی باؤلنگ ایک بار پھر نا کام

Pakistani bowling fails in Australia

لاہور: قومی ٹیم کی دورہ آسٹریلیا میں باؤلنگ پھر سے ناکام، 20 سال پرانی روایت نہ ختم ہو سکی ، جبکہ وکٹیں حاصل کرنے کی اوسط دنیا میں کسی بھی ملک سے زیادہ رہی ۔

پاکستانی ٹیم کی پچھلے 20 سال سے کارکردگی بہتر نہ ہو سکی ، عام طور پر یہ ہی کہا جاتا ہے کہ آسٹریلوی کنڈیشنز میں پاکستانی بیٹنگ لائن خاص طور پر ٹاپ آرڈرز کو زیادہ مشکلا ت کا سامنا کرنا پڑ تا ہے۔

ایک تحقیق کے مطابق قومی ٹیم نے 1999 سے اب تک آسٹریلیا میں 52 اعشاریہ 62 فیصد وکٹیں حاصل کی ہے جبکہ کسی ملک میں قومی ٹیم کی اتنی نا قص کارکردگی نہیں رہی ہے ۔ویسٹ انڈین بولرز 52 اعشاریہ 82 فیصد کے لحاظ سے وکٹیں حاصل کی ہے۔

پاکستانی ٹیم نے آسٹریلیا میں فی ٹیسٹ  میں 11 اعشاریہ 6 فیصد کی اوسط سے وکٹیں حاصل کی ہیں  جو سری لنکا اور ویسٹ انڈیز کے مقابلے میں دوسری ناقص کارکردگی ہے۔ قومی ٹیم کی آسٹریلیا میں ایوریج 48 اعشاریہ 49 ہے ، جبکہ یہ قومی ٹیم کی سوئنگ بولنگ سمجھی جاتی ہے مگر کینگروز کے ملک میں یہ بھی نہ چل سکی ۔

وقار یونس ، شعیب اختر ،یاسر شاہ اور دیگر کھلاڑیوں جو ٹاپ بولرز ہیں ان کی فی وکٹ مجموعی طور پر کافی زیادہ ہے ۔جبکہ وسیم اختر کے کرئیر اوسط 23 اعشاریہ 62 فیصد اور آسٹریلیا میں 24 اعشاریہ 05 رہی ، مشتاق احمد کی کرئیر ایوریج 32 اعشاریہ 97 اور آسٹریلیا میں 33 اعشاریہ 59 رہی اور عمران خان کی کرئیر ایوریج 22 اعشاریہ 81 رہی اور آسٹریلیا میں 28 اعشاریہ 51 ہے۔

Check Also

Squash Tournamet starts in Islamabad

اسلام آباد میں کھیل کے میلے سج گئے

لاہور : اسلام آباد میں اتوار کو عالمی سکواش میلہ سجنے کی تیاری مکمل ،مردوں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے